2بیٹے 4بیٹیاں 1زوجہ میں وراثت کیسے تقسیم ہو

سوال نمبر 2232

 السلامُ علیکم ورحمۃ اللّٰہ و برکاتہ
کیافرماتےھیں علماۓکرام ومفتیان عظام اس مسئلہ میں کہ ایک شخص وفات پا گئے ہیں جس کے 2 بیٹے 4 بیٹیاں  1 زوجہ ہیں ۔
مکمل مال کیسے تقسیم ہوگا ؟ 
سائل سید گل قادری سنی بریلوی بلوچستان دالبندین 

وعلیکم السلام ورحمةاللہ وبرکاتہ 
الجواب۔بعون الملک الوھاب  

 صورت مسئولہ میں زید میت کے ترکہ سے ترتیب وار کل چار طرح کے حقوق متعلق ہوتے ہیں ۔
اول ۔۔۔۔۔۔۔ اس کے مال سے میت کی تجہیز وتکفین کی جاۓ ۔
دوم ۔۔۔۔۔۔ اس کے مال سے میت دیون ادا کئے جائیں ۔
سوم ۔۔۔۔۔ اس کے تہائی  مال سے میت کی  وصیت پوری کی جاۓ ۔ 
چہارم ۔۔۔۔۔۔ اس کے بعد بچے ہوۓ مال و جائداد میں سے میت ورثہ کے درمیان میراث تقسیم کی جاۓ ۔
جیساکہ فتاوی عالمگیری جلد  ٦ صفحہ  ٤٤٧ میں ہے ،،
التَّرِكَةُ تَتَعَلَّقُ بِهَا حُقُوقٌ أَرْبَعَةٌ: جِهَازُ الْمَيِّتِ وَدَفْنُهُ وَالدَّيْنُ وَالْوَصِيَّةُ وَالْمِيرَاثُ. فَيُبْدَأُ أَوَّلًا بِجَهَازِهِ وَكَفَنِهِ وَمَا يُحْتَاجُ إلَيْهِ فِي دَفْنِهِ بِالْمَعْرُوفِ،ثُمَّ بِالدَیْنِ ثُمًّ تُنَفَّذُ وَصَايَاهُ مِنْ ثُلُثِ مَا يَبْقَى بَعْدَ الْكَفَنِ وَالدَّيْنِ إلَّا أَنْ تُجِيزَ الْوَرَثَةُ أَكْثَرَ مِنْ الثُّلُثِ ثُمَّ يُقَسَّمُ الْبَاقِي بَيْنَ الْوَرَثَةِ عَلَى سِهَامِ الْمِيرَاثِ،اھ ملخصا ۔
 صورت مسئولہ میں بعد تقدیم ماتقدم وانحصارورثہ فی المذكورين  میت شخص کے کل مال متروکہ منقولہ وغیرمنقولہ کے چونسٽھ ( 64)حصے کئے جائیں گے ۔ 
اس میں سے آٹھواں حصہ یعنی آٹھ ( 8 )حصہ میت کے بیوی کوملےگا ۔ارشادباری تعالی ،، فَاِنْ  كَانَ  لَكُمْ  وَلَدٌ  فَلَهُنَّ  الثُّمُنُ  مِمَّا  تَرَكْتُمْ  مِّنْۢ  بَعْدِ  وَصِیَّةٍ  تُوْصُوْنَ  بِهَاۤ  اَوْ  دَیْنٍؕ۔ 

پھر اگر تمہارے اولاد ہو تو ان کا تمہارے ترکہ میں  سے آٹھواں  جو وصیت تم کر جاؤ اور دَین نکال کر،(پارہ  ٤ سورہ النساء آیت  ١١) 

باقی بچے چھپن (56)حصہ تو اس میں سے چودہ (14) چودہ (14 )حصہ  دونوں  لڑکوں کو اور سات  (7)سات(7)حصہ چاروں لڑکیوں کو دےدیاجاۓ  گا ۔ ارشادباری تعالی  ،، یُوْصِیْكُمُ  اللّٰهُ  فِیْۤ  اَوْلَادِكُمْۗ-لِلذَّكَرِ  مِثْلُ  حَظِّ  الْاُنْثَیَیْنِۚ۔اللہ(عزوجل) تمہیں  حکم دیتا ہے تمہاری اولاد کے بارے میں  بیٹے کا حصہ دو بیٹیوں  کے برابر ہے۔
مسئلہ ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔  64 
بیوی ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ 8
بیٹا۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ 14
بیٹا۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔14
بیٹی۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ 7
بیٹی۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔7 
بیٹی۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔7 
بیٹی۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔7 

وھوسبحانہ تعالی اعلم بالصواب 
کتبه 
العبد ابوالفیضان محمد عتیق الله صدیقی فیضی یارعلوی ارشدی عفی عنہ
دارالعلوم اھلسنت محی الاسلام 
بتھریاکلاں ڈومریاگنج سدھارتھ نگر یوپی .
المتوطن :۔ کھڑریابزرگ پھلواپور گورابازار سدھارتھنگر یوپی ۔ 
٢٢      صفرالمظفر       ١٤٤٤ھ
١٩       ستمبر              ٢٠٢٢ء











ایک تبصرہ شائع کریں

0 تبصرے

Created By SRRazmi Powered By SRMoney