سلام پھیرتے وقت نظریں کہاں ہونی چاہیے؟


 سوال نمبر 2162

اَلسَلامُ عَلَيْكُم وَرَحْمَةُ اَللهِ وَبَرَكاتُهُ‎

کیا فرماتے ہیں علمائے کرام مسئلہ ذیل کے بارے میں کہ امام سلام پھیرتے وقت دایاں کندھا اور بایاں کندھا پر نظر نہ رکھے تو کیا حکم ہے 

سائل ۔۔۔ محمد عامر دربھنگا



وَعَلَيْكُم السَّلَام وَرَحْمَةُ اَللهِ وَبَرَكاتُهُ‎

الجواب بعون اللہ و رسولہ 

امام نے سلام پھیرتے وقت کاندھون کی طرف نہیں دیکھا تو ایسی صورت میں نماز ہوجاۓگی!

مگر امام کا یہ عمل خلاف مستحب ضرور ہےکیوں کہ سلام پھیرتےوقت شانوں کی طرف دیکھنا یہ مستحبات نماز میں سےہے!


امام علاءالدین أبی بکربن مسعود کاسانی حنفی متوفی ٥٨٧ھ تحریر فرماتےہیں ۔۔


{یستحب فیھا ای فی الصلوة} عندالتسلیمة الاولیٰ علیٰ کتفہ الأیمن و عندالتسلیمةالثانیة علی کتفہ الأیسر ،


بداٸع الصناٸع ، المجلدالثانی ، کتاب الصلوة ، ص ٧٣

{بیروت لبنان}


علامہ شیخ نظام الدین حنفی متوفی ١١٦١ھ اور علمائے ہند کی ایک جماعت نے مستحبات نماز کے زکر میں تحریر فرمایا ہے۔۔۔


عِنْدَ التَّسْلِيمَةِ الْأُولَى إلَى مَنْكِبِهِ الْأَيْمَنِ وَعِنْدَ الثَّانِيَةِ إلَى مَنْكِبِهِ الْأَيْسَرِ


الفتاویٰ الھندیة ، کتاب الصلوة ، المجلدالاول ، ص ٧٣

{مکتبہ زکریابک ڈپو}


اور حضورصدرالشریعہ بدرالطریقہ علیہ الرحمہ تحریر فرماتےہیں ۔۔۔


پہلے سلام میں داہنے شانہ کی طرف دوسرے میں بائیں کی طرف (دیکھنا مستحب ہے)


بہارشریعت ، حصہ ٣ ، ص ٥٣٨

{قادری کتاب گھردھلی}


وااللّٰه و رسولہ اعلم


کتبــــــــــــــــــــــــــہ

عبیــــــداللّٰه حنفـــــــی بریـلوی مقـــام دھـــونرہ ٹانڈہ ضـــــلع بریلی شــریف {یوپی}

٢٦ ذی الحجہ ٣٤٤١؁ھ بروز بدھ









ایک تبصرہ شائع کریں

0 تبصرے

Created By SRRazmi Powered By SRMoney