بغیر سلام پھیرے سجدۂ سہو کا سجدہ کیا تو کیا حکم ہے؟

 سوال نمبر2224

الاستفتاء: السلام علیکم ورحمة الله وبرکاتہ 
علماءکرام‌کیافرماتےہیں فرض‌نماز‌ میں‌سجدۂ سہو‌ واجب‌ہوا‌ امام‌نے قعدۂ اخیرہ میں‌ بغیر سلام‌ پھیرے‌ دو‌سجدہ کیا۔ پھر‌التحیات‌ پڑھ‌کر  نماز‌ مکمل‌ کیا تو کیانماز‌ ہوگئی؟ 
 (سائل۔ میر‌عبدالھادی‌نوری‌ ممبی)

 وعلیکم السلام ورحمة الله وبرکاتہ
الجواب: نماز ہوگئ مگر ایسا کرنا مکروہ تنزیہی ہے، فتاویٰ عالمگیری جلد اول صفحہ ۱۳۹ میں ہے :ومحله {ای سجدة السھو} بعد السلام،سواء كان من زيادة أو نقصان. ولو سجد قبل السلام أجزأه عندنا، هكذا رواية الأصول " اھ 
اور بہار شریعت حصہ چہارم صفحہ ۷۰۸ میں ہے :اگر بغیر سلام پھیرے سجدے کر لیے کافی ہیں  مگر ایسا کرنا مکروہِ تنزیہی ہے.والله تعالیٰ اعلم بالصواب
کتبہ 
محمد معصوم رضا نوریؔ عفی عنہ
۱۶ صفر المظفر ۱٤٤٤ھجری
۱۴ ستمبر ۲۰۲۲ عیسوی چہار شنبہ








ایک تبصرہ شائع کریں

0 تبصرے

Created By SRRazmi Powered By SRMoney